اردوئے معلیٰ

Search

نظر آتے نہیں حالات اور آثار ، یا اللہ

مدینے میں مرا جانا ہوا دشوار ، یا اللہ

 

دکھا دے مجھ کو مکہ اور مدینہ کے حسیں کوچے

’’ میں ہوں مجبور اور معذور تو مختار ، یا اللہ ‘‘

 

ہوائیں رقص کرتی تھیں فضائیں جھوم جاتی تھیں

وہ جب گھر سے نکلتے تھے مرے سرکار ، یا اللہ

 

قدم فیضِ محمد کا وہ جس ذرے پہ ہو جاتا

اُسی لمحے وہ بن جاتا گل و گلزار ، یا اللہ

 

مجھے اس در پہ جانا ہے ، مجھے خضریٰ پہ جانا ہے

اجازت دیں اگر مجھ کو شہِ ابرار ، یا اللہ

 

مدینے کے گلی کوچوں کے ان ذروں کو چوموں گا

قدومِ شاہ سے جو بھی ہوئے سرشار ، یا اللہ

 

درِ مرسل پہ جائے بس یہی قائم کی حسرت ہے

مری گفتار میں بھی یہ رہا اظہار ، یا اللہ

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ