اردوئے معلیٰ

نعتِ حضورِ پاک علیہ السلام ہے

سنئے بگوشِ ہوش ادب کا مقام ہے

 

کوتاہ بیں خرد ہے تو فکر اپنی خام ہے

توصیفِ خواجۂ دو سرا نا تمام ہے

 

حمدِ خدا کے بعد ثنا کا مقام ہے

نامِ خدا کے بعد محمد کا نام ہے

 

احمد ہے اسمِ پاک محمد بھی نام ہے

محبوبِ کبریا ہے وہ عالی مقام ہے

 

رکھا بغیرِ نقطہ و زیر ان کا نام ہے

محبوبیت کا دیکھئے کیا اہتمام ہے

 

ختم الرسل ہے نبیوں میں ذی احتشام ہے

سب مقتدی ہے اس کے وہ سب کا امام ہے

 

اپنوں میں اور غیروں میں شہرہ یہ عام ہے

صادق ہے وہ امیں ہے وہ نیک نام ہے

 

وہ منبعِ کرم ہے سخاوت میں نام ہے

ہر رند شاد کام ہے سیرابِ جام ہے

 

خدمت میں صبح دم ہے کبھی وقتِ شام ہے

یہ جبرئیل ہے کہ نبی کا غلام ہے

 

دنیا چلی ہے کھنچ کے بڑا ازدحام ہے

شہرِ مدینہ قبلہ گہ خاص و عام ہے

 

طیبہ کو دیکھنے کا ارادہ لئے ہوئے

سورج بھی وقتِ شام ادھر تیز گام ہے

 

انساں ہوں یا کہ جن کہ ملائک ہوں اے نظرؔ

وردِ زباں سبھی کے درود و سلام ہے

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے۔۔۔

حالیہ اشاعتیں

اشتہارات

اشتہارات