نعت کی محفل سجانے کا مہینہ آ گیا

نعت کی محفل سجانے کا مہینہ آ گیا

مصطفی کے گیت گانے کا مہینہ آ گیا

 

نُور سے پُرنُور ہے کس دَرجہ بارہ نُور کی

مرحبا! رحمت کو پانے کا مہینہ آ گیا

 

آسمانِ دَہر سے ظُلمت کے بادل چَھٹ گئے

دوستو! خوشیاں منانے کا مہینہ آ گیا

 

غَم زدو!، اے بے کسو! تم کو مبارک باد ہو

سَوئی قِسمت کو جَگانے کا مہینہ آ گیا

 

زِندگی میں پھر ربیع النور آیا مرحبا!

عِشق کی شمع جلانے کا مہینہ آ گیا

 

پیارے آقا کی وِلادت کے ترانوں کی رضاؔ

ہر طرف دھومیں مچانے کا مہینہ آ گیا

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ