اردوئے معلیٰ

Search

نعت کے ذیل میں جب بھی نئے اشعار ہوئے

نور کی لَو سے سبھی لفظ گُہر بار ہوئے

 

دم نکلنے کو ہے اِس تشنہ نگاہی کے سبب

ایک مدت ہوئی دیدارِ رخِ یار ہوئے

 

ان کو تملیک کیا ربِّ دو عالم نے سو وہ

شاہِ کونین ہوئے مالک و مختار ہوئے

 

ربِّ عالم نے دیا خُلقِ معظم اُن کو

اور اِس طور سے وہ حسن کا معیار ہوئے

 

حکمِ لا تَرْفَعُوا أَصْوَات پڑھا ہے جب سے

آنسوؤں سے ہی بیاں ہجر کے آثار ہوئے

 

ہاتھ میں لے کے رَفَعْنا لک ذکرک کا چراغ

ہم پلِ حزن پہ اِس پار سے اُس پار ہوئے

 

جب نکیرین نے مَاکُنْتَ تَقُوْلُ پوچھا

دفعتاً مجھ پہ عیاں حسن کے اسرار ہوئے

 

صدقۂ آلِ عبا ہے کہ مجھ ایسے منظر

سب گنہ گار بھی جنت کے سزاوار ہوئے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ