اردوئے معلیٰ

Search

نورِ چشمِ آمنہ عظمت نشاں بنتا گیا

جانِ عبد اللہ سردارِ جہاں بنتا گیا

 

حق نما، حق آشنا، حق کی اذاں بنتا گیا

وہ کتابِ آخریں کا ترجماں بنتا گیا

 

خوش ادا، شیریں سخن، معجز بیاں بنتا گیا

رفتہ رفتہ سب کے دل کی داستاں بنتا گیا

 

بارگاہِ لم یزل کا راز داں بنتا گیا

مرحبا آگاہ سِرِّ کن فکاں بنتا گیا

 

رہنمائے ساحلِ امن و اماں بنتا گیا

نا خدائے کشتی عمرِ رواں بنتا گیا

 

چارہ سازِ درد و غم ہائے نہاں بنتا گیا

وجہ تسکیں وہ پئے آزردگاں بنتا گیا

 

خرمنِ باطل کو برقِ بے اماں بنتا گیا

کارِ ابلیسِ لعیں کارِ زیاں بنتا گیا

 

نقش پائے مصطفیٰ کی مرحبا گل کاریاں

دامنِ صحرا وہ رشکِ گلستاں بنتا گیا

 

طالبِ منزل ہر اک ہوتا رہا حلقہ بگوش

"​ان کی شخصیت کے گرد اک کارواں بنتا گیا”​

 

صورتاً تنویرِ قرآں سیرتاً قرآنِ کل

عادتاً مثلِ حریر و پرنیاں بنتا گیا

 

تندیِ بادِ مخالف سے نہ گھبرایا کبھی

استقامت کا وہ اک کوہِ گراں بنتا گیا

 

بخش کر سب کو مئے نابِ خمستانِ ازل

وجہ ِسیرابی پئے لب تشنگاں بنتا گیا

 

مرحبا اعجازِ نگہِ پاکِ ختم المرسلیں

اس نے جس ذرہ کو دیکھا آسماں بنتا گیا

 

پڑھ نظرؔ صلِ علیٰ اس ہادیِ اعظم پہ جو

باغِ عالم کی بہارِ جاوداں بنتا گیا

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ