اردوئے معلیٰ

نورِ چشمِ نبی عزیزِ حسن!

کیجئے رہبری عزیزِ حسن!

 

تیری موجِ عطا کی طالب ہے

یہ مری تشنگی، عزیز حسن!

 

تیری بادِ سخا سے کھل جائے

میرے دل کی کلی عزیز حسن

 

اک تبسم سے اپنے بکھرا دو

لطف کی چاندنی عزیز حسن

 

جس کے ذرے ہیں ماہتاب و نجوم

وہ ہے تیری گلی عزیز حسن

 

میری بالیدگیٔ قلب و نظر

ہے عنایت تری عزیز حسن

 

آپ کی بارگاہ عظمت میں

ہو مری حاضری عزیز حسن

 

ناز پرودردۂ شہ نواب

تو ہے جان علی عزیز حسن

 

جانِ شرعِ متین و روحِ صفا

ہیں فقط آپ ہی عزیز حسن

 

دل نے پایا ہے تیرے صدقے میں

عالمِ سر خوشی عزیز حسن

 

دل صدف کا پکارتا ہے یہی

سیدی مرشدی عزیز حسن

 

نذرِ خلوص و عقیدت بجناب آقائی و مولائی

حضرت صوفی سید محمد عزیزالحسن شاہ مدظلہ العالی

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے۔۔۔

حالیہ اشاعتیں

اشتہارات

اشتہارات