اردوئے معلیٰ

نُورِ خُدا، اوجِ بشر، خیرالوریٰ، خیر البشر

مخلوق میں خَلقِ دگر، خیر الوریٰ، خیرالبشر

 

مہجور سب، واصل ہوئے، معذور سب، کامل ہوئے

جن پر پڑی تیری نظر، خیر الوریٰ، خیر البشر

 

حاضر ہیں سب مدحت بہ لب، عرضی بہ دل، تشنہ طلب

در پر ترے، دریوزہ گر، خیرالوریٰ، خیر البشر

 

تسکینِ دل صبحیں تری، تزئینِ جاں شامیں تری

خیرات جُو شمس و قمر، خیر الوریٰ، خیر البشر

 

دیدہ بہت بیتاب ہے، احساس تک بے خواب ہے

بے ضبط ہیں چشمانِ تر، خیر الوریٰ، خیر البشر

 

پژمردہ ہے کیفِ نہاں، آزردہ ہے نبضِ رواں

بادِ صبا لائے خبر، خیر الوریٰ، خیر البشر

 

قریہ ترا رشکِ جناں، دیوار و در منزل نشاں

خاکِ شفا کُحلِ بصر، خیر الوریٰ، خیر البشر

 

یری رضا منزل نما، تیرا کرم خوابِ لقا

تیری ثنا رختِ سفر خیر الوریٰ، خیر البشر

 

جُز آپ کے کوئی کہاں، مجبور کی جائے اماں

اے دل نشیں،اے چارہ گر! خیر الوریٰ، خیر البشر

 

لمحے مرے سرشار ہوں، رستے مرے ہموار ہوں

مرضی تری پائیں اگر، خیر الوریٰ، خیر البشر

 

مطلوب ہے بُردہ ترا، مقصودؔ ہے سایہ ترا

منصور ہو دستِ ہنر، خیر الوریٰ، خیر البشر

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے۔۔۔

حالیہ اشاعتیں

اشتہارات

اشتہارات