اردوئے معلیٰ

Search

نہیں دنیا میں اس سے بڑھ کے کوئی بھی دوا دلکش

تیرے تلووں کو جو چھولے بنے خاکِ شفا دلکش

 

زمانے میں نہیں ہے وارثیؔ اس کا کوئی ثانی

مرے آقا تری گلیوں کی ہے آب و ہوا دلکش

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ