اردوئے معلیٰ

Search

نہیں ہے کوئی برابر نبی کے پیکر کے

یہ چاند تارے ہیں خیرات سب اسی در کے

 

لبوں پہ میرے یہی ہے دعا ہر اک لمحہ

نبی کے ہاتھوں سے مل جائیں جام کوثر کے

 

ہوا ہے جن پہ کرم آپ کا مرے آقا

قدم زمانے میں رکھتے نہیں ہیں وہ ڈر کے

 

یہ رحمتوں کے خزینے ہیں لُوٹ لو بڑھ کر

کہ ان کے فیض سے پلٹو گے جھولیاں بھر کے

 

ملے مدینے کی پھر حاضری جو زاہدؔ کو

تو ہو رہے گا فدا اپنے ہی مقدر کے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ