اردوئے معلیٰ

Search

وردِ لب اک نغمۂ حمدِ خدا رہنے دیا

یوں زباں پر ہم نے اِک حرفِ دعا رہنے دیا

 

ہے کلام اللہ ، روشن راستہ سب کے لیے

یہ اثاثہ رب نے کتنا بے بہا رہنے دیا

 

ہے حرم کی سرزمیں رحمت اثاثہ بے گماں

اُس زمینِ پاک پہ یہ دل بچھا رہنے دیا

 

میں نے حمد و نعت کو اپنا وظیفہ کرلیا

ذکر تیرا لب پہ اے ربّ العلیٰ رہنے دیا

 

خوف کے سارے بتوں کو قلب سے باہر کیا

خوف تیرا ، دل میں اپنے اے خدا رہنے دیا

 

مالکِ ارض و سما نے ہم فقیروں کے لیے

سرورِ کونین کا اک آسرا رہنے دیا

 

ربِّ عالم پر توکُّل کرکے لوگو! میں نے اب

اِک چراغِ آرزو دوشِ ہوا رہنے دیا

 

ربِّ اعلیٰ کا کرم اور تربیت ماں باپ کی

راستہ اپنا بُرائی سے جُدا رہنے دیا

 

ربِّ عالم شکر تیرا ، تونے طاہرؔ کے لیے

حمد گوئی کا مقدّم سلسلہ رہنے دیا

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ