وہ اک یتیم، بے کس وتنہا کہیں جسے

وہ اک یتیم، بے کس و تنہا کہیں جسے

چمکا ہے اس طرح کہ ستارہ کہیں جسے

اک پیکرِ جمال کہ جس کا بدل نہیں

اک صورتِ جمال کہ یکتا کہیں جسے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

لکھوں کوثؔری کیا میں کونسا قصہ ہے اب باقی
پَل میں ورائے عرش گئے اور آگئے
درِ سرکارؐ کیا عظمت نشاں ہے
وہ صداقت وہ دیانت آپؐ کی
خداوندا مرا دِل شاد رکھنا
نگاہِ لطف آقاؐ غم زدہ رنجور ہوں میں
مرے دل میں مری سرکارؐ کی بس یاد بستی ہے
مری سرکارؐ کا یہ آستاں ہے
’’ہم خاک اُڑائیں گے جو وہ خاک نہ پائی‘‘
’’با عطا تم، شاہ تم، مختار تم‘‘

اشتہارات