اردوئے معلیٰ

Search

وہ جلوہ بار ہر سُو ہیں یہ میری خوش نصیبی ہے

نگاہیں میری آہو ہیں یہ میری خوش نصیبی ہے

 

یہ کیا کم ہے کہ ہے توفیقِ اظہارِ طلب مجھ کو

مری آنکھوں میں آنسو ہیں یہ میری خوش نصیبی ہے

 

ادھر اک میں ہوں اور میری خطائیں ہیں ، ادھر لیکن

کرم کے لاکھ پہلو ہیں یہ میری خوش نصیبی ہے

 

تپائے تھے دماغ و دل کبھی جو ہجر کی لو پر

وہ اب مصروفِ یاہو ہیں یہ میری خوش نصیبی ہے

 

شریعت کی کماں کے تیر جتنے آئے ہیں مجھ تک

مرے دل میں ترازو ہیں یہ میری خوش نصیبی ہے

 

یہ ہے ان کے کرم کی حد خطائیں ہو گئیں سب رد

دعائیں سب اثر جُو ہیں یہ میری خوش نصیبی ہے

 

مہک اٹھے معطر نعت کہہ کر روح و دل ماجدؔ

کہ سب الفاظ خوشبو ہیں یہ میری خوش نصیبی ہے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ