اردوئے معلیٰ

Search

وہ حسن تجھے رب نے بخشا ہر حُسن ترے قربان شہا

خود خالق بھی صدقے واری سب حورو ملک حیران شہا

 

تم باعثِ تخلیقِ آدم تم رونقِ عالم روحِ ابد

تم ختمِ رُسل محبوبِ خدا تم مقصودِ قرآن شہا

 

دل ذکر سے تیرے شاد رہے پُر نور رہے آباد رہے

قربان تری غم خواری پر میرے سارے ارمان شہا

 

جو ظلم کرے اپنی جاں پر اور توبہ کرے تیرے در پر

بخشے گا اُسے نسبت سے تری وہ رب تیرا رحمان شہا

 

اے شافعِ محشر نظرِ کرم ہے نفسی نفسی کا عالم

بن تیرے یاور کوئی نہیں کل نبیوں کے سلطان شہا

 

میں طالبِ دُنیا غرقِ جہاں تم مائلِ رحمت ہردم ہو

میں عاصی ہوں مجرم تیرا تو بخشش کا عنوان شہا

 

شرمندہ ہوں میں نادم ہوں اعمال سے دامن خالی ہے

بس نعت ہے میرا سرمایہ ہو بخشش کا سامان شہا

 

ہے دُور شکیلؔ مدینے سے بے چین ہے ایسے جینے سے

بلوائیں اپنے روضے پرہو جائے پھر احسان شہا

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ