اردوئے معلیٰ

Search

وہ لوگ جو جاتے ہیں مکّے میں مدینے میں

تقدیر بناتے ہیں مکّے میں مدینے میں

 

اب تک ہیں فضاؤں میں خوشبوئیں پسینے کی

آثار بتاتے ہیں مکّے میں مدینے میں

 

منظر وہ احد کے ہوں یا غارِ حرا کے ہوں

اک یاد دلاتے ہیں مکّے میں مدینے میں

 

کعبے کی فضا تجھ سے روضے کی ضیا تجھ سے

ہم دل چمکاتے ہیں مکّے میں مدینے میں

 

کعبے کی چمک میں بھی روضے کی مہک میں بھی

ہم تجھ کو ہی پاتے ہیں مکّے میں مدینے میں

 

عشّاق ترے آقا بس تیری محبت میں

آتے کبھی جاتے ہیں مکّے میں مدینے میں

 

اک تیرے تصور میں پھرتے ہیں جو گلیوں میں

ہم پیاس بجھاتے ہیں مکّے میں مدینے میں

 

توحید کا نغمہ ہو یا بات درودوں کی

ہم تجھ کو سناتے ہیں مکّے میں مدینے میں

 

رحمت کی امیدیں ہوں، بخشش کی نویدیں ہوں

سب تجھ ہی سے پاتے ہیں مکّے میں مدینے میں

 

مکّہ بھی ترا اعلیٰ طیبہ بھی ترا افضل

ہم سر کو جھکاتے ہیں مکّے میں مدینے میں

 

اک تیرا سہارا ہو بخشش کا اشارا ہو

اس آس پہ آتے ہیں مکّے میں مدینے میں

 

اے کاش ہو نوری بھی ان سعد نصیبوں میں

ہر سال جو آتے ہیں مکّے میں مدینے میں

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ