ٹوٹتا دل سنبھالنے کے لئے

ٹوٹتا دل سنبھالنے کے لئے

شکریہ ! ہجر ٹالنے کے لئے

 

اس نے آسان کردیا رستہ

ایک مشکل میں ڈالنے کیلئے

 

آخرش زخم کھا لئے کتنے

آئینوں کو اجالنے کے لئے

 

عمر بھر قید میں رہی ہوں میں

کون کہتا نکالنے کے لئے

 

چاک پر دھر دیاگیا اک روز

مجھ کو کوزے میں ڈھالنے کے لئے

 

دل سے رخصت کیا محبت کو

اک غلط فہمی پالنے کے لئے

 

ہاتھ برباد کر لئے تم نے

مجھ پہ کیچڑ اچھالنے کے لئے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ