اردوئے معلیٰ

Search

پاتے ہیں وہی رحمتِ سلطانِ مدینہ

کرتے ہیں جو بھی مدحتِ سلطانِ مدینہ

 

اوصافِ حمیدہ ہوں بیاں کس سے نبی کے؟

ہے پیشِ نظر عظمتِ سلطانِ مدینہ

 

پختہ ہے یقیں ان کی شفاعت پہ ہمارا

کافی ہے بس اک نسبتِ سلطانِ مدینہ

 

جنت میں ٹھکانہ ہوا اس دل کا یقیناً

جس دل میں ہوئی الفتِ سلطانِ مدینہ

 

اس شخص کو حاجت نہیں رہتی کبھی زر کی

مل جائے جسے دولتِ سلطانِ مدینہ

 

حیرت سےجسے دیکھتی ہے چشمِ فلک بھی

دیکھو تو ذرا رفعتِ سلطانِ مدینہ

 

زاہدؔؔ کی ہے بس ایک تمنا کہ لبوں پر

ہو وقتِ قضا مدحتِ سلطانِ مدینہ

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ