اردوئے معلیٰ

پوری امت کو جو سینے سے لگائے ہوئے ہیں

ہم بھی سرکار سے امید بنائے ہوئے ہیں

 

ہر طرف ایک تجلی سے ہوئی ، نور سماں

ہے گماں جیسے وہ محفل میں سمائے ہوئے ہیں

 

مسجدِ اقصیٰ سے ہو کر جو گئی سدرہ تلک

راہ پوری کو فرشتے بھی سجائے ہوئے ہیں

 

نامِ احمد سے ملائک ہیں بناتے موتی

ایک مالا وہ درودوں سے سجائے ہوئے ہیں

 

حور و غلمان دیے جائیں مبارک باہم

رب کی رحمت کو بھی امت پہ لٹائے ہوئے ہیں

 

ہم سے عاصی بھی عطا خلد کے باسی ہونگے

نامِ سرکار جو سینے سے لگائے ہوئے ہیں

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے۔۔۔

حالیہ اشاعتیں

اشتہارات

اشتہارات