پَل میں ورائے عرش گئے اور آگئے

پَل میں ورائے عرش گئے اور آگئے

انساں کا ہے مقام کہاں تک بتا گئے

قیصرؔ اب اس سے بڑھ کے ہو کیا درسِ زندگی

جینا سکھا گئے ، ہمیں مرنا سکھا گئے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

خدا اعظم، خدا سب سے بڑا ہے
پُکارا رو کے جب میں نے، جواب آیا صدا کا
خدا کی حمد کے گونجیں ترانے
سہارا ہے خدا میرا تمہارا
نہ دید ہے نہ سخن اب نہ حرف ہے نہ پیام
اسے ہر بات کہنا جانتا ہوں
مدحـــــتِ ختمِ رسل اور زبانِ بســــــملؔ
ابرِ کرم ہے جن کی ذات، وجۂ سکوں ہے جن کا نام
نگاہِ ملتفت آقاؐ مرے مجھ پر سدا رکھنا
دل و جاں میں قرار آپؐ سے ہے

اشتہارات