اردوئے معلیٰ

Search

پُوچھتے مُجھ سے تُم ہو کیا صاحب

ہے کرم سب حضور کا صاحب

 

مجھ کو حاصل ہیں نعمتیں جِتنی

میرے آقا کی ہے عطا صاحب

 

ذکرِ سرکار وِرد کر لو گر

دل ہے غمگین آپ کا صاحب

 

سیرتِ مصطفیٰ کو اپنا لو

زندگی ہو گی خوش نُما صاحب

 

عِطر کیا چاہے جِس کو آقا کا

گر پسینہ ہے مِل گیا صاحب

 

خُوں کے پیاسوں کو دے اماں ایسا

کوئی دیکھا ہے رہنما صاحب

 

دیکھو کردارِ فاتحِ مکہ

ایسے ہوتے ہیں پیشوا صاحب

 

ہم ہیں گُفتار کے فقط غازی

یہ ہمارا ہے المیہ صاحب

 

مُلتجی ہے یہ مسجدِ اقصیٰ

کوئی ایوب آئے گا صاحب

 

آسماں سے ملائکہ آئیں

بدر کی ہو اگر فضا صاحب

 

عرض کرتا ہے بس یہی مرزا

تُم رہو دِیں کے با وفا صاحب

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ