چاند تاروں فلک پہ زمینوں میں بھی آپ کے پیار کی روشنی روشنی

چاند تاروں فلک پہ زمینوں میں بھی آپ کے پیار کی روشنی روشنی

بادشاہوں میں بوری نشینوں میں بھی آپ کے پیار کی روشنی روشنی

 

کون سی آنکھ میں آپ کا غم نہیں کس کا سر آپ کے سامنے خم نہیں

دل سمندر کے پنہاں خزینوں میں بھی آپ کے پیار کی روشنی روشنی

 

مثل قرآن ہے آپ کی زندگی جزو ایمان ہے آپ کی پیروی

صادقوں غازیوں اور امینوں میں بھی آپ کے پیار کی روشنی روشنی

 

آپ لطف و عنایت کی معراج ہیں غمزدوں بے سہاروں کے سرتاج ہیں

چاہتوں کے مقدس قرینوں میں بھی آپ کے پیار کی روشنی روشنی

 

نور ہر اک نظر کو ملا آپ سے گلشن زندگانی کھلا آپ سے

میرے احساس کے آبگینوں میں بھی آپ کے پیار کی روشنی روشنی

 

جن کی کرتا ہے مدحت خدا ہر گھڑی ان کی عظمت میں کیا ہو سکے گی کمی

سب کے ہونٹوں پہ بھی سب کے سینوں میں بھی آپ کے پیار کی روشنی روشنی

 

جو قلم آپ کے پیار میں جھک گئے ان کی تحریر پر وقت بھی رک گئے

آسؔ ایسے قلم کی جبینوں میں بھی آپ کے پیار کی روشنی روشنی

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

محمد مصطفیٰ سالارِ دیں ہیں
سوچتے سوچتے جب سوچ اُدھر جاتی ہے
وہ جو قرآن ہو گیا ہوگا
کوئی مثل مصطفیٰ کا کبھی تھا نہ ہے نہ ہوگا
آخری عکس
رکھا بے عیب اللہ نے محمد کا نسب نامہ​
حقیقت میں تو اس دنیا کی جو یہ شان و شوکت ہے
نبی کی نعت پڑھتا ہوں کہ ہے یہ دل کشی میری
ذاتِ والا پہ بار بار درود
نہ ہو آرام جس بیمار کو سارے زمانے سے

اشتہارات