چلو شہر نبی کی سمت سب عشاق چلتے ہیں

چلو شہر نبی کی سمت سب عشاق چلتے ہیں

مرے آقا کے قدموں میں جو گرتے ہیں سنبھلتے ہیں

ولی، مجذوب واں پر عشق کے پیکر میں ڈھلتے ہیں

ظفرؔ سے بے سہاروں کے مقدر واں بدلتے ہیں

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ