چلو شہر نبیؐ کی سمت سب عشاق چلتے ہیں

چلو شہر نبیؐ کی سمت سب عشاق چلتے ہیں

مرے آقاؐ کے قدموں میں جو گرتے ہیں سنبھلتے ہیں

ولی، مجذوب واں پر عشق کے پیکر میں ڈھلتے ہیں

ظفرؔ سے بے سہاروں کے مقدر واں بدلتے ہیں

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

وہ اک یتیم، بے کس وتنہا کہیں جسے
نبیؐ کی شان ہے دنیا کا منظر
کہاں میں اور کہاں اُنؐ کی ثنائیں
جب طبیعت اُداس ہوتی ہے
گریزاں مُجھ سے دردِ لادوا ہے
مرے دل میں جمالِ یار دیکھو
ہے مخلوقات پہ احسان اُنؐ کا
آسماں آسماں قدم اُس کے
’’برستا نہیں دیکھ کر ابرِ رحمت‘‘
’’کُن کا حاکم کر دیا اللہ نے سرکار کو‘‘

اشتہارات