اردوئے معلیٰ

Search

چَل آ اِک ایسی نظم کہوں ، جو لفظ کہوں وہ ہو جائے

بس’’ اشک‘​‘​ کہوں تو ، اِک آنسو ترے گورے گال کو دھو جائے

 

مَیں’’ آ‘​‘​ لکھوں ، تُو آ جائے، میں ’’بیٹھ‘​‘​ لکھوں ، تُو آ بیٹھے

مرے شانے پر سر رکھے تو، مَیں’’نِیند‘​‘​ کہوں ، تُو سو جائے

 

میں کاغذ پر’’تِرے ہونٹ‘​‘​ لکھوں ، تِرے ہونٹوں پر مُسکان آئے

میں’’ دِل‘​‘​ لکھوں ، تُو دِل تھامے، میں’’ گُم‘​‘​ لکھوں ، دل کھو جائے

 

تِرے ہاتھ بناؤں پینسِل سے، پھر ہاتھ پہ تیرے ہاتھ رکھوں

کُچھ’’ اُلٹا سِیدھا‘​‘​فرض کروں ، کُچھ’’ سِیدھا اُلٹا ‘​‘​ہو جائے

 

میں’’ آہ ‘​‘​لِکھوں ، تُو "​ہائے”​ کرے، ’’بے چین‘​‘​ لکھوں ، بے چین ہو تُو

پھر میں بے چین کا ’’ب ‘​‘​کاٹوں ، تُجھے چین زرا سا ہو جائے

 

ابھی’’ ع‘​‘​ لکھوں ، تُو سوچے مجھے، پھر’’ش‘​‘​ لکھوں ، تِری نیند اُڑے

جب’’ ق‘​‘​ لکھوں ، تُجھے کُچھ کُچھ ہو، مَیں’’ عِشق ‘​‘​لِکھوں ، تُجھے ہو جائے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ