اردوئے معلیٰ

کائناتِ نعت ،محدودات میں آتی نہیں

 

استغاثہ بحضور رسول کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم

 

کائناتِ نعت ،محدودات میں آتی نہیں

کم نظر کی، اس حقیقت پر نظر جاتی نہیں

 

مدح دیتی ہے حیاتِ جاوداں افکار کو

کونسی خوبی ہے جو وجدان میں لاتی نہیں ؟

 

مدحِ آقا میں جو لکھے جائیں الفاظ و حروف

اُن کی خوشبو دائمی ہوتی ہے لمحاتی نہیں

 

بھول کر درسِ خودی ، امت رسول اللہ ()کی

کونسا در ہے جہاں دامن کو پھیلاتی نہیں؟

 

سیرتِ سرکارِ دو عالمرہے پیشِ نظر

پیروی اُن کی کبھی دنیا میں الجھاتی نہیں

 

روزوشب ہو اُسوۂ خیرالبشر جب سامنے

لمحہ بھر بھی زندگی پر تیرگی چھاتی نہیں

 

خوش نصیبی ہے عزیزؔاحسن کہ شعرو شاعری

اب سوائے حمد و نعت و منقبت بھاتی نہیں

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ