اردوئے معلیٰ

کبھی تیری پازیب کی تھی اور کبھی مری زنجیروں کی

کبھی تیری پازیب کی تھی اور کبھی مری زنجیروں کی

جیون بھر کوئی نہ کوئی ساتھ مرے جھنکار رہی

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ