کتنے ناداں ہیں ترے بھولنے والے کہ تجھے

کتنے ناداں ہیں ترے بھولنے والے کہ تجھے

یاد کرنے کے لیئے عمر پڑی ہو جیسے

تیرے ماتھے کی شکن پہلے بھی دیکھی تھی مگر

یہ گرہ اب کے مرے دل میں‌ پڑی ہو جیسے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ