اردوئے معلیٰ

کرم آج بالائے بام آ گیا ہے

کرم آج بالائے بام آ گیا ہے

زباں پر محمد کا نام آ گیا ہے

 

درودوں کی بارش ہے کون و مکاں پر

کہ آج انبیاء کا امام آ گیا ہے

 

مجھے مل گئی ہے دو عالم کی شاہی

مرا ان کے منگتوں میں نام آ گیا ہے

 

مرے پاس کچھ بھی نہ تھا روزِ محشر

نبی کا وسیلہ ہی کام آ گیا ہے

 

مزا جب ہے سرکار محشر میں کہہ دیں

وہ دیکھو ہمارا غلام آ گیا ہے

 

چراغاں ہوا بزمِ ہستی میں خالدؔ

نگاہوں میں حسن تمام آ گیا ہے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ