کرم محاسن وسیع تیرےؐ

کرم محاسن وسیع تیرےؐ

مقام رتبے رفیع تیرےؐ

 

نبیؐ رسولوںؑ کا مقتدا توؐ

نبیؐ ہیں پیچھے جمیع تیرےؐ

 

خدا کی مرضی تو بس یہی ہے

بنے رہیں ہم مطیع تیرےؐ

 

ہے تیریؐ نسبت سے میری قیمت

غلام سب ہیں وقیع تیرےؐ

 

پلک جھپکنے میں عرش پر تھے

قدم تھے اتنے سریع تیرےؐ

 

عذابِ رسوائی سے بچانا

غلام ہیں یا شفیعؐ تیرےؐ

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

اے شہ انس و جاں جمال جمیل
ہمیں وہ اپنا کہتے ہیں محبت ہوتو ایسی ہو
تمنا ، آرزو حسرت مرے سینے میں رہتی ہے
کیا ذکر محمد نے تسکین دلائی ہے!
کارِ دشوار
دُعا کا آسمان
کون پانی کو اڑاتا ہے ہوا کے دوش پر​
امین فرش پہ پیغام لے کے آیا ہے
جلوے مرے محبوب دکھانے کے لیے آ
اگر قسِمت سے میں اُن کی گلی میں خاک ہو جاتا