کرم کا مرحلہ پیشِ نظر ہے

کرم کا مرحلہ پیشِ نظر ہے

جلال کِبریا پیشِ نظر ہے

ظفرؔ پر ہر نوازش ہے خدا کی

خدا کی ہر عطا پیشِ نظر ہے

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

اور کہاں کو جائیں یا رب
یہ شہر ایسے حریصوں کا شہر ھے کہ یہاں
پَل میں ورائے عرش گئے اور آگئے
فیض چارہ گر کہیے یا عنایت قاتل
کون باتیں کرے تصویروں سے
قلب میں ذِکرِ خیر الوریٰؐ چاہیے
دِل میں آرام و سکوں، لُطف و قرار آپؐ سے ہے
کبھی اُنؐ کے آستاں پہ اپنی جبیں جھُکانا
اُنؐ کے رستوں کی گردِ سفر مانگنا
نبیؐ کے آستاں سے رب ملا ہے

اشتہارات