اردوئے معلیٰ

Search

کسی صورت نشاطِ قلب کا ساماں نہیں ہوتا

ہنسی آنے کو آ جاتی ہے دل خنداں نہیں ہوتا

 

نہیں ہوتا، نہیں ہوتا، کسی عنواں نہیں ہوتا

علاجِ اضطراب و سوزشِ پنہاں نہیں ہوتا

 

بغیرِ حق پرستی، دل نوازی، طاعتِ یزداں

یہ آدم زادہ کچھ بھی ہو مگر انساں نہیں ہوتا

 

ترا ایمان مستحکم نہیں دل کو ترے جب تک

مذاقِ اتباعِ صاحبِ قرآں نہیں ہوتا

 

خود اپنی آگ میں جل جل کے مر جاتا ہے پروانہ

حقیقت میں ہلاکِ شمعِ سوزاں نہیں ہوتا

 

سوادِ کم نگاہی ہے نظرؔ آتا نہیں ہم کو

وہ پردہ پوش ویسے کب قریبِ جاں نہیں ہوتا

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ