اردوئے معلیٰ

کس طرح بھلاؤں گا اندازِ خرام آخر

کس طرح بھلاؤں گا اندازِ خرام آخر

ہر صبح ہوا آ کر زنجیر ہلا دے گی

 

اس چاند کے پیالے میں ہے زہر بھی امرت بھی

تنہائی خدا جانے کیا چیز پلا دے گی

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ