اردوئے معلیٰ

کس کا نظام راہ نما ہے افق افق

کس کا نظام راہ نما ہے افق افق

جس کا دوام گونج رہا ہے افق افق

 

شانِ جلال کس کی عیاں ہے جبل جبل

رنگِ جمال کس کا جما ہے افق افق

 

مکتوم کس کی موجِ کرم ہے صدف صدف

مرقوم کس کا حرفِ وفا ہے افق افق

 

کس کی طلب میں اہل ِ محبت ہیں داغ داغ

کس کی ادا سے حشر بپا ہے افق افق

 

سوزاں ہے کس کی یاد میں تائب نفس نفس

فرقت میں کس کی شعلہ نوا ہے افق افق

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ