اردوئے معلیٰ

Search

کون سا حرف لِکھوں کون سا لہجہ برتُوں

تُو کہ مولا ہے تِرے ذکر میں کیا کیا برتُوں

 

میرے ماتھے پہ عرق آج نِدامت کا سہی

میں تو بے سائے کی رحمت ہی کا سایہ برتُوں

 

ہیں شجر رقص کناں، باد ثنا خوان تری

بے خودی ایسی بڑھی ہے کہ میں سجدہ برتوں

 

نام حسرتؔ کے لبوں پر ہو تِرا شام و سحر

بِن تِرے ذِکر نہ میں ایک بھی لمحہ برتُوں۔

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ