اردوئے معلیٰ

Search

کہاں سے سیکھ کے آئی ہو تم اداکاری

تمھیں تو آتی نہیں تھی کوئی بھی فنکاری

 

مریضِ عشق کا احوال پوچھنے والو

ہٹو تمیں کہاں آتی ہے ہم سی دل داری

 

کہاں طریقہ تھا کچھ ہم میں بات کرنے کا

محبتوں نے سکھائی ہمیں وضع داری

 

کچھ اپنے فیصلوں پر ہم بھی غور کرتے ہیں

دکھاؤ تم بھی کہیں پر ذرا سمجھداری

 

ہمارے جیسے کئی سادہ دل جہاں بیٹھے

وہاں پہ دیکھنے والی تھی اس کی ہشیاری

 

کرے گا میری محبت کا اعتراف اک دن

اسی گمان میں گزری ہے زندگی ساری

 

بیاں وہ کر نے چلا اپنے دل کی کیفیت

مگر یہ ضرب ہمیں پڑ رہی تھی یوں کاری

 

دھمال ڈال قلندر کی اک صدا پر عشق

چمک رہی ہے ترے نام کی دکاں داری

 

تمام زخموں کے ٹانکے ادھڑ گئے مرے دوست

یہ رات گزری ہے اس دل پہ کس قدر بھاری

 

جنونِ عشق ہواؤں میں لے اڑا لیکن

فضائے دل پہ رہا کوئی خوف بھی طاری

 

زبیر کون سی خواہش کا قتل ہو گیا تھا

کہ دل میں تھمتی نہیں ایک پل عزاداری

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ