اردوئے معلیٰ

کیا خوب چمک دار ہیں رخسار نبی کے

کیا خوب چمک دار ہیں رخسار نبی کے

ہر سمت نظر آتے ہیں انوار نبی کے

 

بس ایک طرح سے ہی بھلائی ہے ہماری

ہم خود پہ جو نافذ کریں معیار نبی کے

 

عشّاق کی محفل تو یونہی جاری رہے گی

ہر دور میں آئیں گے طلب گار نبی کے

 

ہر اک پہ برستا ہے وہاں فضل خدا کا

دن رات جہاں ہوتے ہیں اذکار نبی کے

 

اس پر ہی فدا ہستی کے سب راز کھلے ہیں

جس نے بھی مقدّم رکھے افکار نبی کے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ