اردوئے معلیٰ

Search

کیا ہے فتح دو عالم کو ایسی شان حسین

"نہ داستاں ہے کوئ مثل داستان حسین”

 

سہا ہے جس نے ستم وہ ہے خاندان رسول

بہا ہے جس کا لہو وہ ہے خاندان حسین

 

ہمیشہ ہوتی ہے باطل کو ہی شکست نصیب

ہوئے ذلیل دو عالم میں دشمنان حسین

 

سنا ہے سر کو پٹختے ہوئے فرات کا درد

وہ گریہ جب کے سسکتا تھا کاروان حسین

 

جہاد کرتا ہوا، نفرتوں کے نیزوں سے

نکل پڑا ہے محبت کو کاروان حسین

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ