’’گردشِ دور یا نبی ویران دل کو کر گئی‘‘

 

’’گردشِ دور یا نبی ویران دل کو کر گئی‘‘

یورشِ کرب و ابتلا حیران دل کو کر گئی

شاہِ مدینہ لیں خبر اب مجھ پہ وقت سخت ہے

’’تاب نہ مجھ میں اب رہی دل میرا لخت لخت ہے‘‘

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ