اردوئے معلیٰ

گروہِ انبیاء میں ہے بڑا درجہ محمد کا

گروہِ انبیاء میں ہے بڑا درجہ محمد کا

امام الانبیاء ہے وہ زہے رتبہ محمد کا

 

فرازِ عرش تک پہنچا ہے اف جلوہ محمدِ کا

خدا کے بعد ہے سب سے بڑا رتبہ محمد کا

 

لیا جاتا ہے نامِ پاک ہر لحظہ محمد کا

زمیں سے چرخِ ہفتم تک رواں سکہ محمد کا

 

مسلمانوں کا قبلہ خانۂ کعبہ محمد کا

مگر کعبہ کا قبلہ ہے حسیں چہرہ محمد کا

 

نجاتِ اخروی کا ان کی ہے ذمہ محمد کا

جو لیتے نام ہیں صبح و مسا اللہ محمد کا

 

دلوں کے واسطے وجد آفریں نغمہ محمد کا

برائے پیروی بندوں کو ہے اسوہ محمد کا

 

سخن ہے دل نشیں اور پر کشش لہجہ محمد کا

زباں شستہ محمد کی بیاں عمدہ محمد کا

 

اویسِ پارسا عاشق تھا نادیدہ محمد کا

اسی روشن جبیں کو مل گیا خرقہ محمد کا

 

بقدرِ جہد ہے ہر فردِ امت فیضیاب اس سے

حدیثِ پاک و اَلقرآں کہ ہے ترکہ محمد کا

 

رجوعِ عام ہے اہلِ جہاں کا جانبِ طیبہ

تمناؤں کا قبلہ سب کی ہے روضہ محمد کا

 

نگاہِ چشمِ عرفاں پر ہوا ہے آشکارا یہ

اُدھر کعبہ ہے مڑ جائے جدھر چہرہ محمد کا

 

نصیب اس شخص کو روشن ضمیری ہو گئی واللہ

جسے کچھ مل گیا کھانے کو پس خوردہ محمد کا

 

نکیرین آ کے پلٹیں گے مری تربت سے یہ کہہ کر

ثنا خواں یہ تو ہے اللہ کا بندہ، محمد کا

 

وہ نازاں عمر بھر کیوں ہو نہ اپنی خوش نصیبی پر

نظرؔ آ جائے جس کو خواب میں چہرہ محمد کا

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ