اردوئے معلیٰ

Search

ھجر میں ھے یہی تسکین مُجھے

شعر مِل جائیں گے دو تین مُجھے

 

اُس نے مانگی تھی جُدائی کی دعا

اور کہنا پڑا آمین مُجھے

 

اِن کو توڑیں تو مزہ آتا ھے،

اچھے لگتے ھیں قوانین مُجھے

 

اک کھلونا تھا کہ ٹوٹا تھا کبھی

آج بھی یاد ھے تدفین مُجھے

 

تیری صورت کے علاوہ، پیارے

حفظ ھے سورۂ یاسین مُجھے

 

ایک غم سے مَیں بہت خوش تھا مگر

اک خوشی کرگئی غمگین مُجھے

 

کُھردرے پن سے مُلائم تن تک

آزماتی ھے تری جِین مُجھے

 

کوئی بے رنگ مرے ساتھ چُھوا

اور پھر کر گیا رنگین مُجھے

 

کچھ فرشتوں کے مُقدّس پن میں

نظر آتے ھیں شیاطین مُجھے

 

دُگنا حیراں ھوں کہ لگتا ھے وہ شخص

کبھی میٹھا، کبھی نمکین مُجھے

 

شعر کہتا ھوں کہ دِل ھلکا ھو

چاھئیے داد نہ تحسین مُجھے

 

ظلم یہ ھے کہ وہ جاتے جاتے

کرگیا صبر کی تلقین مُجھے

 

تُو مرے شوق پہ حد رکھ، ورنہ

مار دے گا دلِ شوقین مُجھے

 

کُو بہ کُو پھیل گئی بات، سو کل

یاد آتی رھی پروین مُجھے

 

بے نیازی کو تُو رکھ اپنے پاس

نہیں منظور یہ توھین مُجھے

 

مرزا نوشہ سے ھوں بیعت، فارس

غیب دیتا ھے مضامین مُجھے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ