اردوئے معلیٰ

Search

ہر اک بات امی لقب جانتے ہیں

بڑے باخبر ہیں وہ سب جانتے ہیں

 

محمد پکارا تو کیا لطف پایا

زباں جانتی ہے یا لب جانتے ہیں

 

مجھے اشتیاقِ زیارت ہے کتنا

مری چشمِ تر کی طلب جانتے ہیں

 

غلاموں کو رکھتے ہیں اپنی نظر میں

یہاں تک کہ نام و نسب جانتے ہیں

 

ولادت کی شب کون غمگیں ہوا ہے

کہاں پر ہے جشنِ طرب جانتے ہیں

 

یہ احساس محشر میں رکھے گا شاداں

مجھے صرف محبوبِ رب جانتے ہیں

 

حضوری ملی ہے مجھے سنگِ در کی

مرا نام شاہِ عرب جانتے ہیں

 

گلابوں کی نکہت کو اہلِ بصارت

ترے حسن کی تاب و تب جانتے ہیں

 

رہے ان کے اشفاقؔ چہرے منور

جو سلطانِ دیں کا ادب جانتے ہیں

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ