اردوئے معلیٰ

Search

 

ہر جان و ملک کیوں نہو شیدائے محمد

عالم میں ہوا کوئی نہ ہمسائے محمد

 

ہیں شمس و قمر نقش کف پائے محمد

معراج فلک ہے قد زیبائے محمد

ہے عرش نہ عالم بالائے محمد

 

پر آب رہے نرگس شہلائے محمد

بے تاب رہے زلف چلپلائے محمد

 

تھی بخشش امت جو تمنائے محمد

تا عرش کئی بار گئے آئے محمد

بیکل رہے امت کے لئے ہائے محمد

 

دل میں رخ محبوب الہٰی کی ضیا ہے

آنکھوں میں جمال گل عارض کی فضا کی

 

آزار محبت مجھے قسمت سے ملا ہے

بازار شفاعت میں خریدار خدا ہے

سر پر لئے پھرتا ہوں میں سودائے محمد

 

سچ کہو ان آنکھوں سے کوئی اور بھی دیکھا؟

پایا ہے کسی اور نبی نے بھی یہ رتبہ؟

 

بتلا تو سر عرش بریں کون ہے پہنچا؟

اللہ رے زینت تری اے عرش معلے!

جھومر ہے ترا نقش کف پائے محمد

 

قرآن میں سحرا لکھی شوکت ہے بیاں کی

مداح نبی تھے بڑی شہرت ہے بیاں کی

 

عاشق کی نگاہوں میں بھی عظمت ہے بیاں کی

اے وادی یثرب یہی حسرت ہے بیاں کی

ہو جاؤں میں گم اور مجھے پا جائیں محمد

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ