اردوئے معلیٰ

Search

ہر لمحہ ہے رحمت کی برسات مدینے میں

کس درجہ منور ہیں دن رات مدینے میں

 

پھیلائے ہی رہتے ہیں ہاتھوں کو بھکاری سب

ملتی ہے جو بخشش کی سوغات مدینے میں

 

جب گنبدِ خضریٰ پر ڈالوں گا نظر پہلی

آئیں گے بلندی پر جذبات مدینے میں

 

معراج کے نوشہ جو موجود یہاں پر ہیں

آتی ہے فرشتوں کی بارات مدینے میں

 

یہ میری عقیدت کا انعام ہے اے یارو

سورج کی شعاعیں ہیں ذرات مدینے میں

 

آتا ہے یہی دل میں مر جائیں یہیں اب تو

رہ رہ کے مچلتے ہیں جذبات مدینے میں

 

کرتے ہیں فنا خود کو جو عشقِ محمد میں

پاتے ہیں وہ جیون کے سوغات مدینے میں

 

رہ رہ کے فرشتے بھی گاتے ہیں انہیں یارو

ہونٹوں پہ جو میرے ہیں نغمات مدینے میں

 

تا عمر فداؔ ہم کو وہ یاد ہی آئیں گے

گزریں گے سکوں سے جو لمحات مدینے میں

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ