اردوئے معلیٰ

ہر نعت تری لفظوں کی تجمیل ہے آقا

ہر نعت تری حرفوں کی تجلیل ہے آقا

 

ہیں سارے ثناگر ترے حسّاں کی روش پر

ہر نعت ترے حکم کی تعمیل ہے آقا

 

سوچیں تو ترا وصف جو لکھیں تو تری نعت

کیا نعت نگاروں کی یہ تبجیل ہے آقا

 

مدحت کا عطا کیجیے نایاب طریقہ

لفظوں سے کہاں نعت کی تشکیل ہے آقا

 

دل میں بھی تری نعت بیاں میں بھی ثنا ہو

عشّاق کے لہجوں میں جو تحلیل ہے آقا

 

تاریکی میں ابھرے ترا خورشیدِ محبّت

ہر لفظ تری یاد کی قندیل ہے آقا

 

تحسینِ سخن اور فصاحت نہ بلا غت

ہر نعت مرے عجز کی تکمیل ہے آقا

 

توفیق ،کرم ، اذن و عنایات کی بارش

نُوری پہ یہ نعتوں کی جو تنزیل ہے آقا

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے۔۔۔