اردوئے معلیٰ

ہمارا حق کبھی دیا، کبھی نہیں دیا گیا

ہمارا حق کبھی دیا، کبھی نہیں دیا گیا

اگر دیا بھی تو ہنسی خوشی نہیں دیا گیا

 

اے عاشقو! تمہاری بیعتیں میں لے تو لوں مگر

مجھے ابھی یہ کارِ منصبی نہیں دیا گیا

 

تجھے بنا کے مجھ کو دے دیا گیا ہے عرش پر

مگر مجھے زمین پر ابھی نہیں دیا گیا

 

جِسے جِسے میں چاہئے ہوں، ہاتھ کو کھڑا کرے

میں وہ ہوں جو ابھی کسی کو بھی نہیں دیا گیا

 

میں اپنی نوع میں الگ ہوں آو مجھ کو دیکھ لو

میں وہ ہوں جو کبھی کوئی خوشی نہیں دیا گیا

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ