اردوئے معلیٰ

ہمسر ہے کون تیرا سارے جہان والے

سب ہیں ترے ثنا خواں ، اے آسمان والے

 

ہر سمت ہیں بہاریں ، تیرے ہی دم قدم سے

ہر جا ہے فیض تیرا ، کون و مکان والے

 

ربِ رحیم ہے تو ، کتنا کریم ہے تو

در کے ترے گدا ہیں ، سب آن بان والے

 

جینے کا کیا تصور ، ترے بغیر مولا !

تُو ہے تو یہ جہاں ہے ، دونوں جہان والے

 

تُو ہے ازل سے یارب! دائم ہے تُو ابد تک

کتنے ہی مِٹ گئے ہیں ، نام و نشان والے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے۔۔۔

حالیہ اشاعتیں

اشتہارات

اشتہارات