اردوئے معلیٰ

ہم درِ مصطفی پہ جائیں گے

خالی کشکول بھر کے لائیں گے

 

ہم زیاں کاروں، پُر خطاؤں کو

اپنے دامن میں وہ چھپائیں گے

 

دستِ رحمت سے پیاسی اُمت کو

آبِ کوثر وہ خود پلائیں گے

 

اُن کے انوار ظلمتِ شب میں

سِیدھا رستہ ہمیں دکھائیں گے

 

کفر کے بت کدوں میں جا کر ہم

حمد و نعتِ نبی سنائیں گے

 

حمد کے، نعت کے، درودوں کے

ظلمتوں میں دیے جلائیں گے

 

میرے گھر میں ظفرؔ! بوقتِ وصال

آپ تشریف لے کے آئیں گے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے۔۔۔

حالیہ اشاعتیں

اشتہارات

اشتہارات