اردوئے معلیٰ

Search

ہم کو آتا ہے صدا کرنا صدا کرتے ہیں

اُن کو آتا ہے عطا کرنا عطا کرتے ہیں

 

کاش آ جائے فقیروں کو بھی اندازِ طلب

دینے والے تو بصد شوق دیا کرتے ہیں

 

ہوش والوں کے مقدر میں کہاں ایسا جنوں

ہم تِرے نام کا دن رات نشہ کرتے ہیں

 

ان کے مدفن سے بھی خوشبوئے وفا آتی ہے

زندگی میں جو محمد سے وفا کرتے ہیں

 

مصطفٰی اپنے ولی کو نہیں مرنے دیتے

صرف قیدِ غمِ دنیا سے رِہا کرتے ہیں

 

با خدا حسنِ ملیحِ رخِ جاناں پہ بہ شوق

مرنے والے کہاں مرتے ہیں؟ جِیا کرتے ہیں

 

جا کے چوما درِ معشوق تو معلوم ہوا

مشکل آ جائے تو حل کیلئے کیا کرتے ہیں

 

قربتِ یار کے آداب سکھاتا ہوں بہت

اشک لیکن بڑے بے باک ہوا کرتے ہیں

 

میری دھڑکن مجھے کہتی ہے تبسم آؤ

گمشدہ دل کا مدینے میں پتہ کرتے ہیں

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ