ہنگامِ محشر

(کوئٹہ میں برفباری کی تصویر کا دوسرا رُخ )

 

ہے برف کے اِس عکس میں سرشاری و مستی

لیکن ہے اِسی عکس کا اِک دوسرا رخ بھی

 

تصویر کے اس رُخ میں ہے ژولیدہ جوانی

ہے ہوش رُبا صبر طلب ،جس کی کہانی

 

گھنگھور گھٹائیں ہیں دھواں دھار دُھندلکا

یَخ بستہ ہواؤں سے ہے اِک حشر سا برپا

 

آبادیاں مانندِ بیاباں ہیں لَق و دَق

آتا بھی ہے ذی روح نظر کوئی تو منہ فق

 

حرکت ہے نہ ہلچل، نہ حرارت، نہ جنوں ہے

پُر ہَول فضا زیست گرفتارِ فسوں ہے

 

سنسان گلی کوچے ہیں اجڑے ہوئے بازار

ہیں برف میں مدفون چمن سبزہ و گلزار

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

پڑا ہوا ہے بہت سے چہروں پہ مستقل جو غبار کیا ہے
سید فخرالدین بلے کا تخلیقی معجزہ , سات صدیوں بعد نیا قول ترانہ
ہے پیار کا کھیل مصلحت اور خیالِ سود و زیاں سے بالا
بیادِ قائدِ اعظمؒ (بسلسلۂ جشنِ صد سالہ 1977ء)
پوچھتا ہے جب بھی کوئی مجھ سے خاموشی کی بات
نامور شاعر سید فخر الدین بلے (علیگ) کا یوم پیدائش
ہے فلسفوں کی گرد نگاہوں کے سامنے
نارسائی
سید فخرالدین بلے , ایک منفرد تخلیقی شخصیت
نامور شاعر سید فخر الدین بلے (علیگ) کا یوم وفات

اشتہارات