اردوئے معلیٰ

ہو المُعِزّ

یا عزیز الجبار یا مرے ربِ کریم

یہ مرا جسم ترا ، جان تری ، فکر تری

قُل ہو اللہ احد ، قبلہ رُو کر دیا چہرہ کہ نہیں

قُل ہو اللہ احد ، تیرے سوا کس کو ثبات

قُل ہو اللہ احد ، تجھ سے جدا کیسی حیات

سانس امید میں ڈھلتی رہے جانے کب تک

جاں سلگتی رہے جلتی رہے جانے کب تک

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ