اردوئے معلیٰ

Search

ہیں صبحیں میری روشن ہے اجالا میری شاموں میں

تمہارے ذکر سے پیدا ہے برکت میرے کاموں میں

 

پیا اک جام جس نے بھی مٹے آزار سب اس کے

سکونِ قلب ایسا ہے تری الفت کے جاموں میں

 

ذرا سے اک اشارے سے بدل دیتے ہیں تقدیریں

کراماتیں ہزاروں ہیں محمد کے غلاموں میں

 

ترے اوصاف پر کرتی رہے گی ناز سچائی

بھرے ہیں تو نے یوں مفہوم کے رنگ اپنے ناموں میں

 

تمہیں منصب عطا ہے سارے نبیوں پر فضیلت کا

تمہی کو ہے چنا رب نے امام افضل اماموں میں

 

یہی ہے آرزو میری اسی میں سرفرازی ہے

کہ عادل کو بھی شامل کیجئے اپنے غلاموں میں

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ