اردوئے معلیٰ

Search

ہیں کوچۂ سرکار کے سب رشکِ چمن پھول

رہتے ہیں گلستانِ مدینہ میں مگن پھول

 

اللہ نے کس شان سے تخلیق کیا ہے

سرکارِ دو عالم کا تو ہے سارا بدن پھول

 

کرتا ہے درودوں کا وظیفہ جو شب و روز

اس ورد کے صدقے میں وہ بنتا ہے دہن پھول

 

اللہ کے الفاظ ہیں آقا کی زباں ہے

سرکارِ مدینہ کا ہے ایک ایک سُخن پھول

 

ہر سمت جہالت ہی جہالت تھی جہاں میں

برسانے لگا آپ کی آمد پہ گگن پھول

 

رعنائی ہر اِک شے کو ملی آپ کے صدقے

ہیں آپ کے فیضان سے سب کوہ و دمن پھول

 

جن کو درِ آقا کی غلامی ہے میسّر

ہر گام پہ پھر چومتے ہیں اُن کے چرن پھول

 

ہے عاشقِ سرکارِ دو عالم کا یہ ایماں

اُمّت کے لیے ہیں یہ حُسین اور حَسن پھول

 

اس مُلک کو نسبت ہے نبی اور علی سے

خاکیؔ یہ مرا سارے کا سارا ہے وطن پھول

 

(برزمینِ اعلیٰ حضرت)

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ